ایک بار بابراعظم نے ہوٹل میں مجھے اپنے ساتھ رکھا ہوا تھا کہ اچانک آدھی رات کو پولیس کمرے میں آگئی اور آتےہی۔۔ حامزہ مختار کے نئے انکشاف نے پاکستانیوں کو چونک جانےپر مجبور کردیا

بابراعظم حامزہ مختار کے ہمراہ ایک ہوٹل میںتھے کہ پولیس نے آدھی رات کو ہوٹل کے کمرے میں چھاپا مار ڈالا تھا۔حامزہ مختار نامی لاہور کی رہائشی لڑکی نے بابراعظم کے ہمراہ گزارے گئے وقت کے حوالے سے کچھ نئے انکشافات کیے ہیں۔ حامزہ کہتی ہیں کہ جب بابراعظم پاکستان اے ٹیم کی جانب سے کھیل رہے تھے اور ڈومیسٹک میچز کے سلسلے میں شہر سے باہر

جا کر کسی ہوٹل میں قیام کرتے تھے تو اسے اپنے ساتھ ہی رکھتے تھے۔ حامزہ مختار نے اسلام آباد کے کئی ہوٹلز کی نشاندہی کرتے ہوئے بتایا کہ وہ 2015-16میں بابر اعظم کے ساتھ اسلام آباد کے ایک ہوٹل میں ٹھہری ہوئی تھیں۔ دونوں کھانا کھانے کےلئے باہر گئے۔ جب واپس آئے تو ناکے پر کھڑی پولیس نے ان دونوں کوروک کر پوچھا کہ کہاں سے آرہے ہو۔ اس پر بابراعظم نے بتایا کہ ہم لوگ ہوٹل میں ٹھہرے ہوئے ہیں اور کھانا کھانے گئے ہوئے تھے۔ اس وقت تو معاملہ ٹل گیا لیکن رات ساڑھے 12بجے جب بابراعظم اور حامزہ کمرے میں موجود تھے تو پولیس نے ہوٹل کے کمرے کا دروازہ زور زور سے کھٹکھٹانا شروع کردیا۔اور دروازہ کھولنےپر پولیس اہلکار اندر آگئے اور انتہائی سخت لہجے میں پوچھ گچھ شروع کردی کہ تم دونوں کون ہو اور کس حیثیت سے ایک ساتھ رہ رہے ہو۔اس پر بابراعظم نے پاکستان کے سابق اوپننگ بلے باز عمران نذیر کو فون کرکے بلوایا جنھوں نے آکر سارے معاملے کو کلئیر کیا ورنہ نہ جانے کون سی مصیبت کھڑی ہوجاتی ۔ ادھر لاہور کی عدالت نے حامزہ مختار کی درخواست پر تھانہ نصیر آباد پولیس کو معاملے کی انکوائری کرنے کا حکم دے دیاہے۔جبکہ پاکستان کرکٹ بور ڈ کا کہنا ہے کہ یہ معاملہ کھلاڑی کی نجی زندگی سے تعلق رکھتا ہے اور پی سی بی کے دائرہ کا رمیں نہیں آتا ۔ یہ بھی خبر آئی ہے کہ احسان مانی کے چئیر مین پی سی بی اور وسیم خان کے منیجنگ ڈائریکٹر کے عہدے پر رہتے ہوئے بابراعظم ہی ٹیم کے کپتان رہیں گے۔ یادرہے کہ حامزہ مختا نے بابراعظم پر ناجائز تعلقا ت قائم کرنے کے بعد شادی نہ کرنے اور زبان بندرکھنے کےلئے دھمکیاں دینے کے الزامات لگا رکھے ہیں۔اور ایسالگ رہا ہے کہ اس معاملے کو سلجھائے بغیر کرکٹر کو اپنے کیرئیرکے عروج پر پہنچتے ہی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

Sharing is caring!